29/05/2023

ہم سے رابطہ کریں

کراچی: پاکستان تحریک انصاف کے رکن سندھ اسمبلی و ممبر صوبائی پریزنل پالیسی بورڈ سعید آفریدی نے وفد کے ہمراہ سینٹرل جیل کراچی کا دورہ کیا۔ اراکین اسمبلی جمال صدیقی، راجا اظہر خان، رابستان خان، شاہنواز جدون و دیگر بھی ہمراہ موجود تھے۔ اراکین اسمبلی نے سینٹرل جیل کراچی کے جیلر محمد حسن سیٹھو سے ملاقات۔ اراکین نے جیل میں قیدیوں  سے بھی ملاقات کی اور جیل کی صورتحال کا جائزہ لیا۔ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سعید آفریدی کا کہنا تھا کہ جیل میں 6ہزار قیدیوں کی نگرانی کیلئے ایک وقت میں 40 اہلکار پر مشتمل اسٹاف موجود ہوتا ہے۔ جیل میں2400 قیدیوں کی گنجائش ہے جبکہ 4 ہزار سے زائد انڈر ٹرائل قیدی ہیں۔ قیدیوں کی نگرانی کیلئے 370 اہلکاروں کی ضرورت ہے۔ گنجائش سے زیادہ قیدیوں کی وجہ سے عملے کو بھی مشکلات کا سامنا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ قیدیوں کی صحت کے حوالے سے دی گئی سہولیات غیر تسلی بخش ہیں۔ قیدیوں کیلئے جیل میں کوئی لیبارٹری، لائبریری، کھیل کا میدان موجود نہیں۔ قیدیوں کا ماہانہ 4 کروڑ کے کھانے کے اخراجات  تشویشناک ہے۔ کینٹین میں صرف کھانے پینے کی اشیاء کے علاوہ دیگر ضروریات کی چیزیں دستیاب نہیں۔ سیکریٹری داخلہ سندھ جیل اور قیدیوں کے معاملات پر سنجیدہ ہوں۔ انڈر ٹرائل قیدیوں کیلئے قانون سازی، نئی جیل کا قیام وقت کی ضرورت ہے۔ سندھ کے اسٹیک ہولڈرز پر قیدیوں کی ذمہ داری بھی عائد ہوتی ہے۔ سندھ حکومت قیدیوں اور جیل عملے کی مشکلات میں کمی کیلئے اقدامات کرے۔

Share            News         Social       Media