29/05/2023

ہم سے رابطہ کریں

پاکستان کے صوبہ خیبر پختونخوا کے ضلع سوات کے تفریحی مقام کالام میں محکمہ جنگلات کی زمین پر پاکستان کا قومی درخت قرار دیے گئے قیمتی دیار یا دیودار کے درخت کاٹنے والے ملزمان کو پانچ لاکھ جرمانے کے عوض رہا کرنے پر کالام میں شدید غم و غصے کا اظہار کیا جا رہا ہے۔

گزشتہ دنوں کالام اور بحرین کو ملانے والی اہم سڑک پر محکمہ جنگلات کی زمین پر اُگے دیار کے پانچ درختوں کو بھاری مشنیری کی مدد سے کاٹا گیا تھا جبکہ مزید درختوں کو کاٹنے کی کوشش پر اہلیانِ علاقہ نے محکمہ جنگلات کو اطلاع دی، جس نے موقع پر ہی تین افراد کو حراست میں لے لیا۔

محکمہ جنگلات کالام کے ایس ڈی ایف او محمد ظاہر شاہ کا کہنا تھا کہ ’ہم لوگ جب موقع پر پہنچے تو اس وقت تک کم از کم پانچ درخت کاٹے جا چکے تھے۔‘

محمد ظاہر شاہ کا کہنا تھا کہ محکمہ جنگلات کے اہلکاروں نے قانونی اختیارات استعمال کرتے ہوئے مزید درخت کاٹنے سے روک کر ان کو اپنی حراست میں لے لیا اور پانچ لاکھ روپیہ جرمانہ عائد کیا۔ ( بشکریہ بی بی سی اردو )

Share            News         Social       Media